Warning: "continue" targeting switch is equivalent to "break". Did you mean to use "continue 2"? in /home/horla/public_html/wp-content/plugins/jetpack/_inc/lib/class.media-summary.php on line 77

Warning: "continue" targeting switch is equivalent to "break". Did you mean to use "continue 2"? in /home/horla/public_html/wp-content/plugins/jetpack/_inc/lib/class.media-summary.php on line 87

Warning: "continue" targeting switch is equivalent to "break". Did you mean to use "continue 2"? in /home/horla/public_html/wp-content/plugins/jetpack/modules/infinite-scroll/infinity.php on line 155
واقعات لاہور - Lahori
Home / ادب وثقافت / واقعات لاہور

واقعات لاہور


مرتبہ محمدنعیم مرتضیِ
پبلشر: حسنات احمد چوھدری

صحا فی پرو فیسر محمد نعیم مر تضی ا ور تحقیقا تی جر نلز م ۔۔۔۔ کتاب وا قعا ت لا ہور
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

تا ریخ سیکھنے کی ہمیں عا د ت نہی ا ور تا ریخ پڑھنے کا شوق نہی ۔۔ کتا بیں ہم حرید تے نہی کیو نکہ ا د ب ا ور تا ریخ ذ را خشک مضا مین ہیں ا ور ہمیں خشک مضا مین پڑ ھنے کی عا د ت نہی ۔۔
ا ور جو پڑھنے کا شو ق ر کھتے ہیں میرے جیسے کم علم اُ ن کے پا س کتا ب حرید نے کیلیئے پیسے نہیں ۔۔ ا ور ا س پر بد قسمتی سے ا رزاں نرحوں میں لکھنے وا لوں نے چسکے ، مرچ مصا لحے ا ور لچر پن پڑ ھنے ا و ر د یکھنے کی لت لگا د ی ہے ۔۔
ا ور ا یک حا صی تعدا د ا س موا د کی نشئی سی ہو گئی ہے۔۔
ذ ہنی غلا م ہم پہلے بھی تھے ا ور اب بھی ہیں ۔ ا د ب لطیف ا ور تا ریح پڑ ھنے وا لے حا ل حا ل ہیں جبکہ ا س کے بر عکس ا د ب کے نا م پرکثیف موا د لکھا ، پڑھا ا ور
د کھا یا بھی جا رہا ہے ۔۔
میں ا پنی ا نہی پر یشا نیوں ا و رذ ہنی ا لجھنوں میں تھا کہ میرے محترم د و ست پر و فیسر محمد نعیم مر تضی کی کتاب و ا قعا ت لا ہو ر کو کتنے قاری ملیں گے ۔۔
و ہ تو د رو یش صفت جوا ن ا پنی جیب سے سر ما یہ لگا ئے جا ر ہا ہے ۔ میر ے جیسے کئی کتب بینی کے شو قین ا ور نو جوان نسل کو کتب بینی کا شو قین بنا نے کیلیئے
طا لبعلموں ، قلمکا روں ، ا دیب حضرات ، دا نشو روں ا ور مفکر ین میں مفت کتا ب تقسیم کیئے جا رہا ہے ۔۔
میرے ذ ہن میں ا س کتا ب کو لیکر ایک ہی وقت میں کئی مختلف سو چوں کے د ر کھلتے جا رہے تھے ا ور میں ا لجھا ہوا پر یشا ن پریشا ن سا وقت کے ساتھ بہتا جا ر ہا تھا ۔۔
ا سی د وران میں گزشتہ ا توار کو کتاب واقعات لا ہور کے مصنف ا ور میرے پیا رے دوست محترم محمد نعیم مر تضی صا حب کی طرف سے کتا ب کی تقریب ر ونمائی کا
د عوت نا مہ مو صول ہو ا ۔۔
میں ا پنے ا حبا ب کو بتا تا چلوں کہ محتر م پر و فیسر محمد نعیم مر تضی نے ا ہنی ا س
کتا ب میں لا ہور کی 300 سو سا ل پرا نی تا ریخ کو ا یک کتا ب کی شکل میں لا نے کیلیئے ا پنی ز ندگی کے بہترین 17 سے 18 سا ل صر ف کر د یئے ا ور تب کہیں جا کر یہ ا یک مستند کتا ب پا یہ تکمیل کو پہنچی ۔۔
ا توا ر 20 نو مبر 2016 کو لا ہور پر یس کلب کی تا ریح کا ا یک حو بصورت پروگرام
سہ پہر تین بجے کے بعد شروع ہوا ا ور شروع سے آ خر تک سا معین کو ا پنے سحر میں جکڑ کر چلتا رہا ۔۔
کتا ب و اقعات لا ہور کی یہ تقر یب رو نما ئی اس لحا ظ سے بڑی حو بصورت ر ہی کہ
اس تقر یب میں کو ئی سیا سی شخصیت مد عو نہی تھی ۔ یہ تق ریب حا لصتاْ ا دبی تقریب تھی ا ور ا س تقریب میں پڑھنے پڑھا نے والے ا ور ادب سے شغف ر کھنے و الے ا حبا ب شا مل تھے ۔۔
کتاب کی تقریب رو نما ئی میں ا مریکہ و پا کستا ن سے آ ئے ہو ئے ڈ ا کٹرز ، وکلا ٓ ، کا لم نگا ر ، ا دیب ، ما ہرین تعلیم ، شا عر ، طا لبعلم ، مفکر ین ، دا نشور ، ا ینکر ، صحا فی ، فلم ا ور ٹی و ی کے نا مور لو گ مد عو تھے ۔۔
یہ تقریب رو نمائی کیا تھی ا یک ا چھا حا صہ ا دبی میلہ تھا ۔ د ور و قریب سے سبھی جناب پرو فیسر محند نعیم مر تضی کی ا یک آ واز پر لبیک کہتے ہو ئے حا ضر ہو ئے۔۔
ا ور جو لوگ کسی و جہ سے نہ آ سکے وہ بعد میں پر نٹ و ا لیکٹرک میڈ یا ا ور سوشل
میڈ یا پر پروگرا م کی کو ریج ، تصا ویری جھلکیاں ا ور مہما نوں کی رونق ا ور پرو گرام کی کا میا بی د یکھ کر ا پنی غیر حا ضری پر کف ا فسوس ملتے نظر آ ئے۔۔
پرو گرام کا آ غاز تلا وت قرآ ن پا ک اور نعت رسول مقبول ﷺ سے ہوا ۔۔
پرو گرا م کی کمپئیر نگ کے فرا ئض جنا ب نا مور صحا فی گُل نو خیز ا ختر نے بحو بی سر ا نجا م د ئیے ۔۔ ا ور ا پنی میٹھی میٹھی با توں سے پرو گرا م کو ہنسی مسکرا ھٹ
سے د رمیا ن میں حا ضرین محفل کو مخظوظ ہونے کا موقعہ بھی د یتے ۔
گُل نو خیز ا ختر کی کمپئیر نگ پرو گرا م کو سارا وقت ا پنی گر فت میں لیئے ر ہی ۔
و یسے تو بہت سا رے زُ عما ٓ کو د عو ت حطا ب د ی گئی ا ور ہرمقرر نے ایک ا چھا دو ست ۔ ایک بہترین سپیکر ا ور زبر دست کتا ب کا نا قد ہو نے کا ثبوت د یا ۔ سب نا قدین و مقرر ا پنے ا پنے شعبہ کے شہسوار ا ور قا بل صد تعریف ہیں ۔۔
مگر میری سما عت ا ور ذہن کو چند ا یک مقر رین نے کتا ب وا قعات لا ہور ا ور صا حب کتا ب کا مز ید گروید ہ بنا د یا ا ور کتا ب و صا حب کتاب کی شخصیت کے نئے در وا کیئے۔۔۔
معروف ا دیب ا ور فلمی د نیا کا جگمگا تا نا م فلم مو لا جٹ فیم فلم را ئٹر جنا ب نا صر ا دیب صا حب نے ا پنے حطا ب میں کہا کہ ا یک وقت تھا کہ ا نکی فلم کو فلا پ قرار دے دیا گیا اور پھر د نیا نے د یکھا کہ و ہی فلم پا کستا ن کی پہچا ن ا ور تا ریخ کا
حصہ بن کرا بھری ا ور آ ج تک کو ئی فلم ا تنی کا میا ب اور ضربا لمثل کا د رجہ نہی پا سکی ۔ا نہو ں نے بڑے جز با تی ا نداز میں پیشین گو ئی کی کہ میری فلم کی طرح ا یک وقت آ ئے گا کہ یہ کتا ب لا ہو ر کی تا ریح پر ایک مستند ا نسا ئیکلو پیڈ یا کی حیثیت پائے گی ا ور د نیا ئے ا ردو ا دب و تا ریخ کی ا یک کا میا ب ترین کتا ب ہو گی ۔۔۔ ا یگز یکٹو ا یڈ یٹر روز نامہ جہا ن پا کستا ن محمد ند یم چو ہد ری نے کہا کہ تا ریح کا کھوج کُھرا لگا نے کیلیئے بڑی محنت ، عرق ریز ی ، جستجواور تحقیق کی ضرورت
ہوتی ہے ۔۔ ا ور کتا ب وا قعات لا ہور تحقیقا تی جرنلزم کا مجمو عہ ہے ۔
صحا فی محمد ندیم چو ہدری نے کہا کہ کتا ب وا قعا ت لا ہور ا نویسٹیگیشن جر نلزم کے
شا ئق صحا فیوں کیلیئے بہترین معا ون و مدد گا ر ثا بت ہو گی ۔۔
معروف کا لم نگا ر محمد ا سلم لودھی نے کہا کہ ا پنے کا م سے ا تنا کمٹڈ ا نسا ن میں
نے آ ج تک نہی دیکھا ا ور ا تنا مخلص دوست بھی ۔۔
ما ہر تعلیم شہباز گو لڈن نے کہا کہ پر و فیسر محمد نعیم مر تضی کی کتا ب میں تین سو
سا ل پرا نا لا ہور ا ن کیلیئے ا یک د ستا ویزی فلم کی طرح ہے جب چا ہو کتاب کھولو
اور فلم د یکھ لو ۔۔
ا دا کار راشد محمود نے کہا کہ صحا فت ا ور ا دب میں لکھنے والوں کیلیئے کوئی شارٹ کٹ نہی ہو تا ۔ ا ور جو لوگ شارٹ کت ڈ ھونڈتے ہیں وہ نا کا م رہ جا تے ہیں ۔
کا لم نگا ر فرخ سہیل گو ئند ی نے ا پنے حطا ب میں کہا کہ پہلے میں صرف لا ہور کے
سحر میں گر فتار تھا ا ب کتا ب وا قعات لا ہور میں لا ہور کی تین سو سالہ تا ریخ
کو پڑھ کر کتا ب ، صا حب کتا ب ا ور لا ہور کے عشق میں مبتلا ہو گیا ہوں ۔
فرح سہیل گو ئند ی نے کہا کہ کتا ب وا قعا ت لا ہور نہ صرف صحا فیو ں بلکہ تا ریخ
کے طا لبعلموں کیلیئے ا یک بہتر ین ا ثا ثہ ثا بت ہو گی ۔۔
فرح سہیل گو ئند ی نے ا پنے حطا ب میں صا حب کتا ب کو کتا ب وا قعات لا ہور کا
ا گلہ ا ید یشن ا پنے ا دارہ کے بینر تلے پبلش کر نے کی پیشکش کر دی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
سا ئنس ا ور تیکنا لوجی کے ا س دور نے ہمیں نہ صرف ا پنی تا ریخ سے نا واقف کر دیا
ہے بلکہ کتا ب بینی سے بھی د ور کر د یا ہے ۔۔ ا یسے کُتب بیز ار ما حول ا ور پُر آ شوب د ور میں پرو فیسر محمد نعیم مر تضی کی کتا ب ہوا کا ا یک ٹھنڈا جھو نکا ہے۔۔
لا ہو ر سے عشق کر نے ا ور تا ریح کے طلبا ٓ و صحا فیوں کیلیئے ا یک بہتر ین تخفہ
ہے ۔۔۔ کتا ب و ا قعا ت لا ہور بہت جلد ا نشا ٓ ا للہ ا یک منفر د مقا م حا صل کر نے
میں کا میا ب ہو جا ئے گی ۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔
با ہر ا ذ ا ن مغر ب ہو ر ہی تھی ا ور ا ند ر لا ہور پر یس کلب کے ہا ل میں پروگرام ا پنے ا ختتا م کو پہنچا تما م مہما نوں کا شکریہ ا دا کیا گیا ، چا ئے ، بسکٹ ، سینڈ وچ
اور نمکو سے مہما نو ں کی توا ضع کی گئی ۔۔ صا حب کتا ب آ تو گراف د یتے ہوئے
فرداَ فردا مہما نوں سے مصا حفہ کرتے ہوئے ا نہیں گیٹ پر ر حصت کر تے ر ہے ۔۔
پر فیسر محمد نعیم مر تضی میز با ن بہتر ین ، مہما ن نفیس ترین ، ا د یب ا علی ،
موٓ ر خ بے مثا ل ، دوست ا نتہا ئی شا ندار ، کا لم نگا ر جا ندار ، با پ ا نتہا ئی شفیق ، بھا ئی ا نتہا ئی محبتوں والا ، ا ستا د دوست نما اور شخصیت میں با زوق و با وقار
ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ا للہ سلا مت ر کھے عز ت ، ا یما ن ، صحت و تند رستی کے سا تھ ۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ آ مین ثُمہ آ مین یا ر ب ا لعا لمین

کے بارے میں ویب ڈیسک

بھی چیک

پتھربنا دیا مجھے رونے نہیں دیا…..ناصرکاظمی

پتھربنا دیا مجھے رونے نہیں دیا دامن بھی تیرے غم میں بھگونے نہیں دیا تنہائیاں …

جواب دیجئے

%d bloggers like this: