Home / دلچسپ / لاہورکی پہلی ڈبل ڈیکربس

لاہورکی پہلی ڈبل ڈیکربس

لاہورمیں ڈبل ڈیکربس چلنے کاسلسلہ پاکستان بننے کے چارسال بعد 1951ء میں شروع ہوگیاتھا۔ لاہورمیں پہلی ڈبل ڈیکر بس اتوار2ستمبر 1951ء کوچلائی گئی تھی ۔ابتدامیں برطانوی کمپنی لیلینڈ موٹرزلمیٹیڈکی بنی چھ بسیں  منگوائی گئیں اوران بسوں کوچلانے کی ذمہ داری ایک سرکاری ادارے لاہوراومنی بس سروس کے سرتھی۔ڈبل ڈیکر بسیں شہرمیں چلانے سے ایک روز قبل اسمبلی ہال کے سامنے نمائش کے لیے پیش کی گئیں تولاہوریوں نے اس ’’عجوبے‘‘ میں گہری دلچسپ دلچسپی لی۔ پورادن لوگ بس کودیکھنے کے لیے جوق درجوق آتے رہے۔ شہریوں نے بسوں میں سفرکرنے میں گہری دلچسپی لی۔ان کے لیے بس کی دوسری منزل پرسفرکرناسب سے پسندیدہ مشغلہ بن گیا۔بس کایکطرفہ کرایہ چارآنے تھا۔ ٹکٹ دینے کے لیے بس کنڈکٹرکے پاس ایک چھوٹی سی ٹکٹ پرنٹ کرنے والی مشین ہوتی تھی۔ شہرمیں چلنے والی بسوں کے روٹ اس طرح تھے:
روٹ نمبر 1: مال روڈ تا ایئرپورٹ
روٹ نمبر2: کرشن نگر ،لوئرمال، ریگل چوک،ملکہ کابُت(چیئرنگ کراس)، ریلوے اسٹیشن، گڑھی شاہو، دھرم پورہ، صدربازار، کینٹ، پاک فورس سینما، گلوب سینما،آراے بازار
روٹ نمبر3: شاہ نوراسٹوڈیو تا داروغہ والا براستہ ریلوے اسٹیشن تا مغل پورہ
روٹ نمبر4:شاہ نوراسٹوڈیو تاریلوے اسٹیشن براستہ چوبرجی، ایم اے اوکالج، جین مندر، سیکرٹریٹ ،جی پی او ،میکلوڈ روڈ
لاہور کی اولین ڈبل ڈیکر بسیں 1970ء کی دہائی تک رفتہ رفتہ ختم ہوتی چلی گئیں۔ 1980ء کی دہائی میں ان بسوں کوفیروزپورروڈپرواقع اڈے میں نیلام کردیاگیا۔

کے بارے میں ویب ڈیسک

بھی چیک

Mosque hazarat Ali Hajveri.R.A

جب مسجدحضرت علی ہجویریؒ کے دو مینار گرنے سے 9 افراد جاں بحق،50 زخمی ہوئے

لاہورمیں12 جولائی1963ء کوخوفناک بادوباراں اور طوفانی ہواؤں کی وجہ سے مسجدحضرت علی ہجویریؒ المعروف داتاصاحب …

جواب دیجئے

%d bloggers like this: